ابھی آنے والا ہے Sun 6:00 PM  AEDT
ابھی آنے والا ہے شروع ہوگا 
Live
Urdu radio
ایس بی ایس اردو

بیرونِ ملک سفر کرنے والے آسٹریلینز جو مشکلات میں گرفتار ہوئے

Hakeem Al-Araibi is escorted out of court by Thai prison officers Source: AAP

سنہ ۲۰۱۹ میں کئی آسٹریلینز کے نام اس وقت عالمی خبروں کا حصہ بنے جب وہ بیرونِ ملک سفر کر رہے تھے۔ ان میں سے کچھ خبریں مثبت تھیں اور کچھ منفی۔ مگر کچھ خبریں ایسی بھی تھیں جن سے جڑے مسائیل اب بھی حل طلب ہیں۔

بیرونِ ملک سفر کی وجوہات کچھ بھی ہوں مگر آسٹریلینز کی بہت بڑی تعداد ہر سال ملک سے باہر جاتی ہے ۔ انِ ملکوں کے مختلف قوانین اور رسم و رواج  سے ہر  ایک واقف نہیں ہوتا۔ مگر ہر طرح کی معلومات کے باوجود سنہ ۲۰۱۹ میں  کچھ آسٹریلنز دوسرے ممالک میں ایسی مشکلات سے دوچار  ہوئے جو عالمی خبریں بنیں۔ 

بیرونِ ملک سفر کرنے والے آسٹریلینز کے لئے ۲۰۱۹ ایک ملا جلا سال تھا 

فروری ۲۰۱۹ میں آسٹرییلیا میں مہاجر قرار دئے جانے والے بحرینی نژاد فٹبالر حکیم العرابی تھائی لینڈ میں دو مہینے کی نظر بندی کے بعد میلبورن واپس لوٹے۔ العرابی ہنی مون مناکر واپس لوٹ رہے تھے جب انہیں بحرینی حکام کو مطلوب ہونے کے باعث بنکاک میں روک لیا گیا تھا۔العرابی کا کہنا تھا بحرینی حکومت انہیں سیاسی انتقام کا نشانہ بنارہی ہے۔ اُن کی حراست کے خلاف آسٹریلیا سمیت دنیا بھر میں آواز اٹھائی گئی اور آخرِ کار بحرینی حکومت کو عالمی دباو کے آگے جھکنا پڑا۔ ۲۵ سالہ فٹبالر نے جب آسٹریلین سر زمین پر قدم رکھا تومیلبورن ائیپورٹ پر  اپنے حامیوں کے جمِ غفیر کو دیکھ کر وہ جذباتی ہوگئے۔ حکیم العرابی کی گرفتاری کی وجہ ان کے مہاجر ہونے کی اطلاع عالمی ایجنسیز تک نہ پہنچنا تھی۔ ملک واپسی کے کچھ ہفتوں بعد انہیں آسٹریلیا کی شہریت دے دی گئی۔

  غیر ملکی نظربندی کے بعد ملک واپس لوٹنے والے ایک اور آسٹریلیان نعیم اعزازی تھے  جو ۲۰۱۹ میں متحدہ عرب امارات میں قطر کے لئے جاسوسی کے الزام میں ڈیڑھ سال قید رہنے کے بعد واپس لوٹے۔ قید کے دوران انہیں تذلیل اور دھمکیوں کا سامنا رہا، انہیں مبینہ طور پر جسمانی تشدد کے بعد ایک جھوٹے اقرارِ جرم پر دستخط کرنے پر مجبور کیا گیا۔ مگر یہاں بھی آسٹریلیا کی سفارتکاری کے باعث ان کی رہائی ممکن ہوئی۔ اس مشکل سے رہائی پانے پر انہوں نے آسٹریلین حکام کا شکریہ ادا کیا۔ 

 آسٹریلیا کا شہری ہونا اس لئے بھی  قابلِ فخر ہے کیونکہ آسٹریلین حکومت بیرونِ ملک ہر مشکل میں آپ کا ساتھ دیتی ہے

Naim Azaz Abbas
Emotional reunion as Australian jailed in UAE for spying returns home
SBS

افغان حکومت اور طالبان کے درمیان قیدیوں کے تبادلے کے باعث آسٹریلین  ٹیچر ٹیموتھی ویکس  تین سال تک طالبان کی قید میں رہنے کے بعد آسٹریلیا واپس پہنچے۔ ان کی رہائی پر اپوزیشن اور حکومت دونوں ہی نے ان تمام افراد کا شکریہ ادا کیا جنہوں نے  ٹیموتھی ویک اور ان کے ساتھ رہا ہونے والے امریکی پروفیسر کی رہائی میں مدد کی۔

ان تمام افراد کے علاوہ شمالی کوریا میں جاسوسی کے الزام میں قید ۲۹ سالہ طالبِ علم بھی انُ خوش قسمتوں میں تھے جو ملک واپس لوٹنے میں کامیاب ہوئے۔ 

وکی لیک کے بانی جولین اسانج اِس سال بھی ملک واپس نہیں آسکے بلکہ اُن پر امریکہ حوالگی کا خطرہ منڈلا رہاہے۔ میلبورن کے اسلامک اسٹیدیز کے پروفیسر بھی اب تک ایرانی جیل میں ہیں جبکہ بلغاریہ میں قتل کے الزام میں ۱۱ سال قید کاٹنے والے آسٹریلین جوک پالفریمین آخرِ کار رہا ہو گئے مگر اُن پر بلغاریہ چھوڑنے پر پابندی ہے۔ 

آسٹریلین شہری جوک پالفریمین کا کہنا تھا کہ انہوں نے یہ قتل اپنے دفاع میں کیا تھا۔ اُن کی رہائی کے خلاف بلغاریہ میں بڑے پیمانے پر مظاہرے بھی ہوئے تھے 

 ایک اور آسٹریلین لیوکس فاولر کی کہانی تلخ واقعات سے تعبیر رہی۔ وہ اور ان کی دوست امریکہ اور کنیڈا کی سرحد پر  مبینہ طور پر ایک ھائی وے رہزنی میں  رہے اور قتل کر دئے گئے۔ اُن کے قاتلوں کی تلاش ایک معمہ رہی جو  پولیس سے بچنے کے کوششوں میں مفرور رہےاور بعد میں امریکین ۔ کنیڈین سرحد کے دشوارگزار راستوں میں مردہ پائے گئے۔  لیوکس فاولر نیو ساوتھ ویلز کے معروف پولیس افسر اسٹیفین فاولر کے بیٹے تھے۔

Lucas Fowler
Senior NSW police officer Stephen Fowler has addressed the media in Canada about the murder of his son.
AAP

اپنے بیٹے کے قتل کی اطلاع کے بعد کنیڈا میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے  مقتول کے والد نیو ساوتھ ویلز کے معروف پولیس افسر اسٹیفین فاولر نے کہا کہ وہ ایک تجربہ کار پولیس افسر مانے جاتے ہیں مگر آج وہ خود کو بہت بے بس محسوس کر رہے ہیں۔

شائید مجھے ایک ماہر آسٹریلین پولیس افسر سمجھا جاتا ہو مگر میں اس وقت ایک ایسے باپ کی حیثیت سے آپ کے سامنے کھڑا ہوں  جس کا بے قصور جوان بیٹا  قتل کر دیا گیا  اور وہ کچھ نہیں کر سکتا

 

 بظاہر یہ تمام خبریں سنہ ۲۰۱۹   کے ساتھ رخصت ہو رہی ہیں مگر ان میں سے کئی سنہ ۲۰۲۰ پر بھی اپنی چھاپ ڈالتی رہیں گی جبکہ بہت سی گزری خبریں کئی لوگوں کی زندگیوں سے عمر بھر  الگ نہیں ہو سکیں گی۔

Coming up next

# TITLE RELEASED TIME MORE
بیرونِ ملک سفر کرنے والے آسٹریلینز جو مشکلات میں گرفتار ہوئے 12/12/2019 07:35 ...
طلسمِ ہوشربا کا جادو اب انگریزی میں 27/02/2020 11:21 ...
ایس بی ایس اردو خبریں ۲۷ فروری 27/02/2020 11:21 ...
آنکھوں کا معائینہ اہم کیوں؟ 26/02/2020 10:46 ...
ہر سکھیاں ۔ تین بہنوں کی صوفی گائیگی کا سفر 26/02/2020 14:03 ...
سیاحت میں اضافہ ہوگیا، اب مرحلہ ہے ذمہ داری کا۔ 25/02/2020 08:16 ...
سلام فیسٹیول ۲۰۲۰۔ میلبورن میں اسلامی ثقافت کا رنگا رنگ میلہ 25/02/2020 08:50 ...
ایس بی ایس اردو خبریں ۲۴ فروری ۲۰۲۰ 24/02/2020 14:55 ...
ہائر کار کیا ہوتی ہے اور کیسے کام کرتی ہے؟ 21/02/2020 10:05 ...
ایس بی ایس اردو خبریں ۲۰ فروری ۲۰۲۰ 21/02/2020 14:59 ...
View More