ابھی آنے والا ہے Wed 6:00 PM  AEST
ابھی آنے والا ہے شروع ہوگا 
Live
Urdu radio

آپ کو اپنی زبان میں کووڈ 19 سے متعلق کیا معلوم ہونا چاہئے

ایس بی ایس کووِڈ-۱۹ کے بارے میں آپ کو آپ کی زبان میں قابلِ اعتبار رپورٹنگ سے باخبر رکھتا ہے- اس حقائق نامے میں ہر وہ چیز شامل ہے جس کے بارے میں آگاہی ضروری ہے-

گھر پر رہیَے   محفوظ رہیَے   جُڑے رہیئے   زندگیاں بچائیے

ایس بی ایس کووڈ۔۱۹ سے متعلق ریاستی معلومات جاننے کے لئے یہاں کِلک کریں۔  

مالی مشکلات :

“اگر آپ کو مالی مشکلات کا سامنا کر رہے ہیں تو منی سمارٹ کی اس ویب سائٹ www.moneysmart.gov.au پر جائیں یا قومی قرض کی ہیلپ لائن 1800 007 007 پر کال کریں۔"

جاب سیکر اور جاب کیپر ادائیگیاں

جاب کیپر ادائیگیاں مارچ دو ہزار اکیس تک جاری رہیں گی جبکہ  جاب سیکر ادائیگیاں دسمبر دو ہزار بیس تک جاری رہیں گی۔ آنے والے مہینوں میں حکومت جاب سیکر پروگرام کا پلان جاری کرے گی جبکہ رقم میں ستمبر سے کمی کردی جائیگی۔

جاب سیکر۔ موجودہ [1,115] ، ستمبر سے[815]

اس کے علاوہ ستمبر کے آخر سے ہر دوہفتے کے تین سو ڈالر وصول کئے جاسکتے ہیں [پہلے ۱۰۶ ڈالر]۔

اگر مسلسل رقم درکار ہے تو، چار اگست سے بے روزگاری سے منسلک رقم ملازمین کی خدمات سے جڑی ہونا ضروری ہے اور جاب ڈٰھونڈنے کا سلسلہ چار مہینے تک ہونا چاہیئے۔

جاب کیپر:

جاب کیپر ادئیگیاں دو حصوں [مستقل اور عارضی] میں تقسیم کردی گئی ہے۔

مستقل ملازمت کی ہر دو ہفتے کی ادائیگی: موجودہ [ 1,500]، ستمبر سے[1,200]، جنوری ۲۰۲۱ سے[1,000]۔

عارضی ملازمت کرنے والوں کے لئے ادائیگی: موجودہ [1,500]، ستمبر سے [750]، جنوری ۲۰۲۱سے [650]۔

کووِڈ-۱۹ کیسے پھیلتا ہے؟

کووِڈ-۱۹ ایک سے دوسرے فرد میں مندرجہ ذیل طریقوں سے منتقل ہوتا ہے:

  • ایسے شخص سے قریبی ملاپ جو متاثرہ ہو یا مرض کی علامات ظایر ہونے میں ۲۴ گھنٹے باقی ہوں
  • ایسے شخص سے ملاپ جو کہ مصدقہ طور پر متاثرہ ہو اور کھانس اور چھینک رہا ہو
  • چیزوں اور سطحوں پر ہاتھ لگانا (جیسے دروازے کے ہینڈل یا ٹیبل) جن پر متاثرہ شخص کی جانب سے کھانسا یا چھینکا گیا ہو اور پھر اپنے منہ اور چہرے پر ہاتھ لگانا-

آسٹریلوی حکومت تمام رہائشیوں سے کووڈ سیف ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کی درخواست کرتی ہے - 

کووِڈ-۱۹ کی علامات کیا ہیں؟

وفاقی حکومت کی ویب سائٹ کے مطابق کرونا واِرس کی علامات ہلکی بیماری سے لے کر نمونیا تک ہیں-
کووِڈ ۱۹ کی علامات زکام یا فلو جیسی ہی ہیں جیسے کہ:

  • بخار
  • سانس کی علامات
  • کھانسی
  • گلے میں سوجن
  • سانس لینے میں دشواری

 

دیگر علامات میں ناک بہنا، سر میں درد، جوڑوں اور پٹھوں میں درد، پیچش، اُلٹی، سونگھنے اور زائقہ جانچنے کی صلاحیت میں کمی، بھوک کم لگنا اور تھکن شامل ہیں۔

علامات ظاہر ہونے کی صورت میں کیا کرنا چاہیے؟

اگر آپ آسٹریلیا آنے کے ۱۴ دنوں کے دوران یا کسی بھی کووِڈ-۱۹ کے متاثرہ شخص سے ملنے کے ۱۴ دنوں کے دوران اگر آپ میں علامات ظاہر ہو جائیں تو فوری طور پر ڈاکٹر سے رجوع کریں-
اپنے ڈاکٹر کو کال کر کے وقت لیں یا نیشنل کرونا وائرس ہیلتھ انفارمیشن ہاٹ لائن   1800020080 پر رابطہ کریں- ہسپتال یا کلینک اپنی علامات بتائے بغیر مت جائیں-

جانے سے پہلے ہسپتال یا کلینک فون کر کے اپنی سفری تفصیلات سے آگاہ کریں یا اگر آپ کسی کووِڈ-۱۹ کے کسی متاثرہ شخص سے ملے ہیں- آپ اس وقت تک اپنے گھر، ہوٹل یا ہیلتھ کلینک میں تنہائی میں رہیں جب تک حکام آپ کو اپنی روز مرہ کی زندگی میں جانے کا نہیں کہ دیتے-

اگر آپ کسی سے اپنی علامات کے بارے میں بات کرنا چاہتے ہیں تو قومی کرونا وائرس ہیلپ لائن پر مشورہ کریں- یہ لائن چوبیس گھنٹے اور ساتوں دن کام کرتی ہے- ۱۸۰۰ ۰۲۰ ۰۸۰

آسٹریلین سرکار پورے آسٹریلیا میں کرونا کی معمولی علامات( کھانسی، بخار، گلے میں درد، سانس میں دشواری یا تھکاوٹ) کے حامل لوگوں کو جانچنے کے لیے جی پی ریسپیریٹری کلینک قائم کر رہی ہے-

معلوم کیجئے کہ آپ کے علاقے میں جی پی کلینک کہاں ہے اور ملاقات کے لیے کیسے اندراج کرایا جائے؟

  اگر آپ کے علاقے میں کوئی کلینک نہیں ہے تو مزید معلومات کے لیے  ھیلتھ ڈائریکٹ یا اپنی سٹیٹ یا ٹیریٹری کی ھیلتھ ویب سائٹ پر جائیں-

گر آپ کو سانس لینے میں دشواری ہے یا اور کسی ہنگامی صورتحال کے لیے 000 پر کال کریں-

کیا آپ کا کووِڈ-۱۹ کا ٹیسٹ ہوگا؟

آسٹریلیا کی قومی کابینہ نے ٹیسٹنگ کو پورے آسٹریلیا میں کم علامات والے سب لوگوں تک پھیلانے کا فیصلہ کیا ہے تاکہ مثبت کیسس کو جلد از جلد پہچانا جا سکے-

وائرس کا علاج کیسے کیا جاتا ہے؟

کرونا وائرس کا کوئی علاج نہیں ہے لیکن زیادہ علامات کو ادویات سے ٹھیک کیا جا سکتا ہے- وائرس کے خلاف اینٹی بائیوٹکس بھی کام نہیں کرتیں-

 کچھ لوگ جو اس سے متاثر ہوں وہ شاید بیمار بھی نا ہوں، کچھ ہلکا بیمار ہوں اور اس سے وہ ٹھیک ہو جائیں اور کچھ بہت بیمار پڑ جائیں- کرونا وائرس کے پرانے تجربات سے یہ ثابت ہوا ہے کہ جو لوگ اس سے زیادہ متاثر ہوں وہ یہ ہیں:

  • وہ لوگ جن کی قوتِ مدافعت کم ہے (مثلاََ کینست کے مریض)
  • بزرگ افراد
  • ایبوریجنل اور ٹورس آئیلینڈرز کیونکہ ان میں دائمی امراض زیادہ ہیں

  • دائمی امراض میں مبتلا لوگ

  • اجتماعی ریائشگاہوں میں رہنے والے

  • حراست میں رکھے گئے لوگ

بہت چھوٹے بچے اور نومولود

کس شخص کو تنہائی میں رہنا چاہئیے؟

کوئی بھی شخص جو پندرہ مارچ دو ہزار بیس کی رات سے آسٹریلیا آیا ہے یا وہ سمجھتا ہے کہ وہ کووڈ ۔ ۱۹ سے متاثرہ شخص سے ملا ہے، اسے خود ساختہ تنہائی یا علاحدگی میں چودہ دن تک رہنا ہے۔

اگر آپ میں کووڈ ۔ ۱۹ پایا گیا ہے تو آپ کو گھر پر رہنا ہوگا۔

  • عوامی جگہوں پر نہ جائیں، جن میں کام، اسکول، کالج، شاپنگ سینٹر اور تعلیمی ادارے شامل ہیں
  • کسی دوسرے شخص سے گھر کا سودا منگوالیں اور اسے گھر کے دروازے پر ہی رکھنے کا کہہ دیں۔
  • گھر میں لوگوں کا داخلہ ممنوع کردیں، صرف وہ لوگ جو گھر میں رہتے ہیں انھیں آنے کی اجازت دیں

سماجی فاصلہ کیا ہے؟

سماجی دوری ایک ایسا اقدام جس کے ذریعے کووڈ۔۱۹ کے پھیلاو کو روکا جارہا ہے۔ بیماری کی حالت میں گھر پر رہنا، غیر ضروری عوامی مصروفیات میں شامل نہ ہونا اور لوگوں سے ڈیڑھ میٹر کی دوری پر رہنا سماجی دوری کے اقدامات میں شامل ہے۔

اگر کسی متاثرہ شخص نے کوئی چیز چھوئی جیسا کہ میز اور دروازہ تو اس سے دور رہنا بھی سماجی دوری میں شامل ہے۔

جتنا آپ لوگوں سے دور رہیں گے، وائرس کا پھیلنا بھی اتنا ہی دشوار ہوگا۔

کیا میں اپنے خاندان والوں سے معمر افراد کی سہولیات، ایج کئیر فیسیلیٹی پر مل سکتا ہوں؟

ایج کئیر اداروں میں وائرس کا پھیلاو نہایت ہی نقصاندہ ثابت ہوسکتا ہے۔ معمر افراد کی بہتری کے لئے چند قوانین لاگو ہوتے ہیں۔

اگر آپ  پچھلے چودہ دن میں باہر سے سفر کرکے آسٹریلیا آئے ہیں، کسی کووڈ متاثرہ شخص سے رابطے میں ہیں یا آپ کو بخار ہے تو ایج کئیر ادارے میں نہ جائیں۔

 یکم مئی سے لازمی ہے کہ اگر آپ ایج کئیر ادارے جانے چاہتے ہیں تو انفلوینزا ویکسین ضرور لگوائیں۔

 کیا مجھے سرجیکل ماسک پہننا چاہیئے؟

کرونا وائرس کے ایک دفعہ پھر پھیلنے کی وجہ سے چند ریاستوں اور علاقہ جات میں ماسک پہننے کو لازمی قرار دے دیا ہے۔

وکٹوریہ کے کئی علاقوں میں ماسک پہننے کی تجویز کی گئی ہے یا پھر اسے لازمی قرار دیا گیا ہے۔

نیو ساوتھ ویلز میں لوگوں کو کہا گیا ہے کہ اگر وہ کسی ہاٹ اسپاٹ یا ایسی جگہ کام کرتے ہیں جہاں سماجی فاصلہ رکھنا ممکن نہیں تو فیس ماسک پہنیں۔

  • اگرچہ ماسک پہننا ضروری ہے، ان اقدامات کو لینا جاری رکھیں۔
  • بیماری کی صورت میں گھر پر رہیں
  • دوسرے لوگوں سے سماجی فاصلہ[ ڈیڑھ میٹر] کا برقرار رکھیں
  • زیادہ لوگوں کے ساتھ یا رش سے بچیں
  • حفظان صحت کا خیال رکھیں
  • علاقوں میں بدلتی ہوئی صورتحال پر نظر رکھیں
  • مزید معلومات کے لئے اس ویب سائٹ سے حاصل کریں

https://www.health.gov.au/news/health-alerts/novel-coronavirus-2019-ncov-health-alert/how-to-protect-yourself-and-others-from-coronavirus-covid-19

آسٹریلیا سے آمد و رفت (ملک کے اندر آنا یا باہر جانا) 

  • آسٹریلینز کو ہر صورت تمام غیر ضروری سفر سے بچنا ہوگا۔

    ریاستیں اپنے لحاظ سے بارڈر بند کرنے سے متعلق قدغنیں لگاسکتی ہیں۔

  • قومی پبلک ٹرانسپورٹ کے اصول

    پبلک ٹرانسپورٹ خدمات ریاست اور علاقہ جات کی ذمہ داری ہے۔ وفاقی کابینہ نے عوام اور مسافروں کی صحت اور حفاظت کو مدِنظر رکھتے ہوئے پبلک ٹرانسپورٹ کے چند اصول بنائے ہیں جن میں بیماری کی صورت میں سفر نہ کرنا، سماجی فاصلے کو برقرار رکھنا اور کیش کا استعمال نہ کرنا شامل ہیں۔ پبلک ٹرانسپورٹ استعمال کرنے والے کو ماسک پہننا ضرور نہیں لیکن رضاکرانہ طور پر ماسک پہننے پر کوئی پابندی نہیں۔ کووڈ۔۱۹ سے متعلق پبلک ٹرانسپورٹ آپریشن کے اصولوں کے بارے میں مزید معلومات کے لئے یہ ویب سائٹ وزٹ کیجئے۔

    https://www.infrastructure.gov.au/transport/files/COVID19_public_transport_principles_29052020.pdf  

 

آستریلیا پہنچنے والے تمام مسافروں کو ان کی قومیت یا منزل سے قطع نظر ، گھر جانے سے قبل ، 14 دن کے لئے خود کو مخصوص سہولیات میں تنہا رکھنا ہوگا ۔

قرنطینہ میں داخلے سے قبل اور واپس جاتے ہوئے ان کا کرونا ٹیسٹ بھی کیا جائے گا۔

آپ کو قرنطینہ کے اخراجات میں بھی حصہ ڈالنا پڑسکتا ہے۔ ان ضروریات کا نفاذ ریاستی اور علاقائی حکومتوں کے زیر انتظام کیا جاتا ہے:
نیو ساوتھ ویلز: https://www.nsw.gov.au/covid-19/travel-and-transport-advice
وکٹوریا: https://www.dhhs.vic.gov.au/information-overseas-travellers-coronavirus-disease-covid-19
اے سی ٹی:https://www.covid19.act.gov.au/community/travelling-and-transport
این ٹی: https://coronavirus.nt.gov.au/stay-safe/quarantine
کوینزلینڈ :https://www.qld.gov.au/health/conditions/health-alerts/coronavirus-covid-19/protect-yourself-others/quarantine
ایس اے: https://www.covid-19.sa.gov.au/restrictions-and-responsibilities/travel-restrictions
تسمانیا:ttps://www.coronavirus.tas.gov.au/travellers-and-visitors
ڈبلیو اے:https://www.wa.gov.au/organisation/department-of-the-premier-and-cabinet/covid-19-coronavirus-travel-wa

آسٹریلوی شہری اور پرمننٹ ریزیڈینٹ افراد کووڈ۔۱۹ کی وجہ سے بیرونِ ملک سفر نہیں کرسکتے۔

لیکن اگر آپ کو باہر جانا ہی ہے تو مندرجہ ذیل وجوہات کی بنا پر آن لائن درخواست جمع کراسکتے ہیں:

کووڈ۔۱۹ کی وجہ سے آپ امداد فراہم کرنے لئے سفر کررہے ہیں

  • سفر کا مقصد کسی اہم کاروبار یا صنعتوں کا چلانا ہے ( درامدات اور برامدات)
  • ایسے طبی علاج کے لئے سفر کرنا ہے جو آسٹریلیا میں دستیاب نہیں
  • کسی ذاتی وجہ سے سفر کرنا بےحد ضروری ہے
  • انسانی وجوہات کی بنا پر سفر کرنا ہے
  • قومی مفاد کے لئے سفر کرنا ہے

 ٹرانزٹ ہب

سفری قوانین میں تیزی سے تبدیلیاں آرہی ہیں۔ اگر آپ آسٹریلیا واپس آرہے ہیں تو:

  • اپنی ائیرلائن اور ٹریول ایجنٹ سے رابطے میں رہیں، راستہ کو چیک کرلیں
  •  ٹرانزٹ ائیرپورٹ پر حکومتی اعلانات پر نظر رکھیں
  • اگر آنے اور جانے کے دوران کوئی سوالات ہیں تو قریبی ایمبیسی یا کونسلیٹ سے رابطہ کریں

www.smartraveller.gov.au

مزید معلومات ڈیپارٹمنٹ آف ہوم افئیرز کی ویب سائٹ سے حاصل کیجئے

https://www.homeaffairs.gov.au/news-media/current-alerts/novel-coronavirus

تمام مسافروں پر چودہ دن کی خود ساختہ تنہائی یا سیلف آئی سولیشن لازمی ہے۔

اگر اس پرعمل نہیں کیا گیا تو ریاست یا دیگرعلاقائی حکومت آپ پر پینلٹی لاگو کرسکتی ہے۔

مزید معلومات اس ویب سائٹ پر حاصل کریں۔

www.smartraveller.gov.au

 

آسٹریلوی حکام وبا سے بچاو کے لئے کیا کر رہے ہیں؟

وزیراعظم اسکاٹ موریسن نے  اس مسئلے سے نمٹنے کے لئے " ایمرجنسی رسپانس پلان" کا آغاز کردیا ہے۔

آسٹریلیا کے گورنر جنرل نے انسانی بائیوسیکورٹی ایمرجنسی کی مدت میں سترہ جون دو ہزار بیس سے سترہ ستمبر دو ہزار بیس تک کے لئے تین مہینے کا اضافہ کردیا ہے۔

مالی مشکلات میں پھنسے گھریلو اور چھوٹے کاروباروں کے لئے حکومت نے لچکدار ادائیگیوں کی سہولت فراہم کردی ہے۔

  • مالی مشکلات میں پھنسے افراد کے لئے ترسیل/خدمات کو منقطع نہیں کیا جائے گا
  • قرضوں اور کریڈٹ کی ادائیگی میں ڈیفالٹ کی صورتحال کو ملتوی کیا جائے گا
  • قرضوں پر سود اور لیٹ فیس کو معاف کردیا جائے گا
  • ضروری کاموں میں بجلی اور دیگر ضروریات کو کم سے کم بند کیا جائے گا
  • جو بل ادا کر سکتے ہیں وہ ضرور کریں تاکہ بنیادی خدمات کی فراہمی کو یقینی بنایا جاسکے

چند مخصوص ویزا ہولڈرز کے لئے مراعات

ورکنگ ہالی ڈے ویزا ہولڈر:

صحت، ایجڈ کئیر، ڈسابیلیٹی کئیر، چائلڈ کئیر، زراعت اور کھانے کے شعبوں میں کام کرنے والے جن کا ویزا چھے مہینے تک محدود ہے اور اگلے چھے مہینوں میں ختم ہورہا ہے، وہ اپنے ویزے کی مدت میں مزید اضافہ کراسکتے ہیں۔

 سیزنل ورکر پروگرام اور پیسیفیک لیبر اسکیم:

اس ویزا کو اگلے ایک سال تک بڑھایا جاسکتا ہے۔

 عارضی اسکلڈ ویز ہولڈر:

نوکری ختم ہونے کی صورت میں ان افراد کے پاس ساٹھ دن ہیں جن میں انہیں نیا اسپانسر ڈھونڈنا ہے ورنہ آسٹریلیا چھوڑنا ہوگا، چاہے بچت کے پیسے یا گھر والوں سے امداد میسر ہو۔

عارضی طور پر کام ختم ہونے یا اوقات میں کمی پر یہ پابندی لوگو نہیں ہوگی، اور موجودہ مالی سال میں دس ہزار ڈالر تک سوپر انوئیشن فنڈ استعمال کیا جاسکتا ہے۔

بین القوامی طلبا:

کام ہونے صورت میں طلبا آسٹریلیا میں رہ سکتے ہیں۔ اگر کام، گھر سے امداد یا خود کے پاس پیسے نہیں ہیں تو طلبا کو دوسرے اقدامت کا سوچنا ہوگا۔

نرسنگ اور ایجڈ کئیر کے شعبوں میں کام کرنے والے طلبا ہفتے میں بیس گھنٹے سے زیادہ کام کرسکتے ہیں۔

آسٹریلیا میں کم سے کم بارہ مہینے رہنے والے طلبا اپنے سوپر انوئیشن کے فنڈ استعمال کرسکتے ہیں۔

وکٹوریا میں حکومت کے ریلیف پیکج کے تحت بین الاقوامی طلباء ۱۱۰۰ ڈالر  کی امداد حاصل کر سکیں گے-حکومت کا امدادی پیکج لاکھوں لوگوں کی امداد کرے گا-

سیاح: 

اپنے ملک لوٹ جائیں، خاص طور پر وہ افراد جن کے پاس گھریلو امداد نہی

 چائلڈ کئیر:

کرونا وائرس وبا کے دوران تقریباً دس لاکھ خاندانوں کو مفت چائلڈ کئیر فراہم کی جائیگی۔

اس شعبے کی پچاس فیصد تک بچوں کی فیس کا خرچہ حکومت برداشت کرے گی۔ 

گھریلو تشدد[ڈومیسٹک وائلینس] کے خلاف امداد

کرونا وائرس کی وجہ سے ہونے والے گھریلو تشدد اور جنسی تشدد مظلومین کے حکومت نے ڈیڑھ سو ملین کے پیکج کا اعلان کیا ہے۔

ذہنی صحت کے لئے امداد

ذہنی صحت اور عوام کی مجموعی صحت کے لئے حکومت نے چہترملین ڈالر کی امداد کا اعلان کیا ہے۔

حکومت کا نیا ڈیجیٹل پلیٹفارم " ہیڈ ٹو ہیلتھ" معلومات کا اہم ذریعہ ہوگا جس کے ذریعے عوام کو اہم معلومات فراہم کی جائے گی، جس میں کرونا وائرس وبا کے دوران بہتر ذہنی صحت کے لئے طریقے، اپنے بچوں اور پیاروں کی امداد اور ذہنی صحت سے متعلق مزید معلومات اور خدمات حاصل کرنے کے طریقے بتائے جائیں گے۔

www.headtohealth.gov.au

حکومتی اقدامات جاننے کے لئے اس ویب سائٹ پر جائیے

 Emergency Response Plan for Novel Coronavirus (COVID-19 

انگریزی میں معلومات حاصل کرنے کے لئے اس ویب سائٹ پر جائیے۔

 health.gov.au/news/health-alerts/novel-coronavirus-2019-ncov-health-alert 

 

معلومات کا ذریعہ:

آسٹریلوی ڈیپارٹمنٹ آف ہوم افئیرز

 


آسٹریلیا میں لوگوں کو ایک دوسرے سے رابطے کے دوران کم ازکم ڈیڑھ میٹر کا فاصلہ رکھنا چاہیئے۔

اجتماعات کی حدود پر اپنی ریاست کی پابندیوں کو دیکھیں.

https://www.sbs.com.au/language/urdu/how-australia-s-states-and-territories-are-relaxing-coronavirus-restrictions

 اگر آپ میں نزلہ یا زکام جیسی علامات ہیں تو گھر پر ہی رہیں اپنے ڈاکٹر کو کال کرکے ٹیسٹ کرائیں یا پھر کرونا وائرس انفارمیشن ہاٹ لائن 080 180020 پر رابطہ کریں۔

۔ یہ معلومات تریسٹھ زبانوں میں دستیاب ہے۔

http://www.sbs.com.au/coronavirus