ابھی آنے والا ہے Sun 6:00 PM  AEDT
ابھی آنے والا ہے شروع ہوگا 
Live
Urdu radio
ایس بی ایس اردو

ایس بی ایس اور اے بی سی کے شکایاتی طریقہ کار پر سینیٹ کی انکوائری کے خلاف ردعمل

ABC Chair Designate Ita Buttrose speaks during a press conference with Prime Minister Scott Morrison February 28, 2019. Source: AAP

اے بی سی کی سربراہ ایٹا بروتوس نے وفاقی حکومت پر سیاسی مداخلت" کا الزام لگاتے ہوئے کہا ہے کہ آسٹریلیا کے پبلک براڈکاسٹرز کی شکایات سے تمٹنے کے طریقہ کار پر سینٹ کمیٹی بنانے کا مقصد ان نشریاتی اداروں پر دباؤ ڈالنا ہے۔ انہوں نے سینیٹ سے مطالبہ کیا کہ اگلی پارلیمینٹری بیٹھک پر انکوائری کو معطل یا ختم کیا جائے۔

 اے بی سی کی چیئر ایٹا بٹروس نے  کہا ہے کہ پبلک بڑاڈکاسٹر کس طرح شکایات سے نمٹتے ہیں اس پر تحقیقاتی کمیٹی بٹھالنے کا مقصد  سیاسی ہے تاکہ ٹیکس دہندگان کے پیسے سے چلنے والے ان نشریاتی اداروں کو ڈرایا جا سکے۔  سینیٹ کی کمیونیکیشن کمیٹی کے سربراہ اینڈریو بریگ نے گزشتہ ہفتے انکوائری کا اعلان کرتے ہوئے کہا تھا کہ پبلک براڈکاسٹر کے شکایات سے نمٹنے کے طریقے  پر عوامی تحفظات کے باعث سینٹ کمیٹی  شنوائی کرے گی۔

ایک بیان میں سنیٹر ایڈریو برگ نے کہا کہ اے بی سی کے ایک مضبوط حامی کے طور پر، میں پریشان ہوں کہ شکایات پر سنجیدگی سے توجہ نہیں دی جا رہی ہے اور اس سے کو بقول ان کے نقصان پہنچ رہا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ اگر غلطیاں ہوتی ہیں، تو آسٹریلوی قومی نشریاتی ادارے سے توقع کرتے ہیں کہ وہ انہیں جلد از جلد حل کر ے مگر مجھے تشویش ہے کہ ایسا نہیں ہے

حکومت پر  اے بی سی کا  یہ تنقیدی بیان اعلان بورڈ کے اپنے شکایات کے نظام کے آزادانہ جائزہ لینے کے چند ہفتوں بعد آیا ہے۔ سابق محتسب اعلیٰ جون میک میلین اور ایس بی ایس کے سابق ڈائیریکٹر  نیوز اور کرنٹ افئیرز جِم کیرول اے بی سی کے اس شکائیتی طریقہ کار کے جائیزہ کار تھے جو اگلے سال مارچ تک  اس بارے میں بورڈ کو دوبارہ رپورٹ کریں گے۔

ایٹا بٹروس نے اے بی سی کو بتایا کہ سینیٹ کا یہ کام نہیں کہ وہ کسی ایسے عمل میں مداخلت کرے جس کا جائیزہ اپنے طریقہ کار کے مطابق پہلے ہی لیا جاتا رہا ہو۔ بلکہ یہ جائیزہ لینا  اے بی سی کے بورڈ کی اپنی قانونی ذمہ داری ہے۔

Prime Minister Morrison has announced the Government has recommended to the Governor-General that Ita Buttrose be appointed as the next Chair of the ABC.
Prime Minister Scott Morrison and ABC Chair Designate Ita Buttrose take questions from media during a press conference in Sydney, Thursday, February 28, 2019.
AAP

 وہ کہتی ہیں کہ موجودہ حکومت قومی نشریاتی ادارے کو خاموش کرنا چاہتی ہے ۔ ان کے مطابق یہ سیاست دانوں کا کام نہیں کہ وہ طے کریں کہ قومی نشریاتی ادارے کا شکایتی نظام کیسے چلے اور یہ سمجھنا ضروری ہے کہ اے بی سی اور ایس بی ایس عوامی بڑاڈکاسٹر ہیں ریاستی براڈکاسٹر نہیں۔۔

لیبر پارٹی کی کمیونیکیشن کی ترجمان مشیل رولینڈ مِس بٹروز کے بیان سے متفق ہیں۔

ایس بی ایس کے ترجمان کا کہنا ہے کہ ایس بی ایس کے پاس شکایات سے نمٹنے کا ایک بہت مضبوط اور موثر نظام ہے جس میں ایک آزاد محتسب بھی شامل ہے، اور اس عمل کے بارے میں کوئی تشویش نہیں پائی گئی ہے۔

ترجمان نے یہ بھی کہا کہ "ہم انکوائری سے حیران رہ گئے، لیکن ایس بی ایس جوابدہی کے شفاف طریقے کو اپناتے ہوئے  نہ صرف  ادارتی آزادی کو برقرار رکھے گا بلکہ اس انکوائیری کو تنقید کا جواب دینے کے موقع کے طور پر استعمال کرے گا۔

ایٹا بٹروز اس وقت تک  اے بی سی  کے  خلاف اس سینیٹ انکوائری کو ختم کرنے یا کم از کم موخر کرنے کا مطالبہ کر رہی ہیں جب تک اے بی سی کی اپنی تحقیقات کے نتائج سامنے نہیں آتے۔

'We're not the enemy': Fierce backlash grows against Senate ABC inquiry

گرینز کی سینیٹر سارہ ہینسن ینگ، جو سینیٹ کی کمیونیکیشن کمیٹی کی نائب سربراہ بھی ہیں، کہتی ہیں کہ جب پارلیمنٹ دوبارہ شروع ہو گی تو وہ اے بی سی اور ایس بی کے بارے میں اس سینٹ انکوائری کو روکنے کی کوشش کریں گی۔

لیکن وزیر اعظم سکاٹ موریسن نے تحقیقات کا دفاع کرتے ہوئے کہا ہے کہ کوئی بھی سرکاری ادارہ سینیٹ کی جانچ سے بالاتر نہیں ہے۔

ڈاکٹر مارگریٹ سائمنز ایک فری لانس جرنلسٹ اور صحافتی امور کی ماہر ہیں۔

وہ کہتی ہیں کہ    اے بی سی اور ایس بی ایس کے فیصلوں پر تنقید کی جانی چاہئے، لیکن حکومت نے اس انکوائری کے انعقاد کی جو وجوہات بیان کی ہیں اس میں وزن نہیں ہے  خاص طور پر ایک ایسے وقت جب پارلیمانی وسائل محدود ہیں ایسی بے نتیجہ انکوائیری پر عوامی  رقم کا ضیاع بے فائیدہ ہے۔

وہ بتاتے ہیں کہ ان کے خیال میں انکوائری اب کیوں بلائی گئی ہے:’حال ہی میں کئی ایسے ہائی پروفائل کیسز سامنے آئے ہیں جن میں اے بی سی نے حکومت کو ناراض کیا ہے، اور یقیناً، لونا پارک میں آتشزدگی سے متعلق دستاویزی فلم کے حوالے سے نیو ساؤتھ ویلز لیبر پارٹی کو بھی ناراضگی ہوئی ہے‘۔

ڈاکٹر سائمن کہ مطابق خبر رساں اداروں کا سیاسی یا تجارتی اثر و رسوخ سے پاک ہونا جمہوریت کے کام کرنے کے لیے بہت ضروری ہے۔ سینیٹ کی کمیونیکیشن کمیٹی آنے والے مہینوں میں تجاویز لے کر ْسماعت کرے گی، جس کی رپورٹ اگلے سال فروری میں متوقع ہے۔


 

Coming up next

# TITLE RELEASED TIME MORE
ایس بی ایس اور اے بی سی کے شکایاتی طریقہ کار پر سینیٹ کی انکوائری کے خلاف ردعمل 21/11/2021 00:09 ...
ایس بی ایس اردو خبریں 20 جنوری 2022 20/01/2022 03:00 ...
کووڈ ۱۹ کے دوران آسٹریلیا کے 47 ارب پتیوں کی دولت میں دوگنا اضافہ 20/01/2022 1:03:15 ...
ایس بی ایس اردو خبریں 19 جنوری 2022 19/01/2022 12:12 ...
ایس بی ایس اردو خبریں 18 جنوری 2022 18/01/2022 03:20 ...
کم عمر بچوں کی ویکسین ، والدین کا کیا خیال ہے ؟ 18/01/2022 11:28 ...
اومی کرون سے بچاو کیوں ضروری ہے 18/01/2022 06:00 ...
نوجوانوں میں آن لائن شاپنگ کے بڑھتے رحجانات اور پاکستانی ملبوسات کی مقبولیت 17/01/2022 2:00:10 ...
اردو خبریں 17 جنوری 2022 . اپیل مسترد ہونے کے بعد جوکوویک کی آسٹریلیا سے روانگی 17/01/2022 00:05 ...
پاکستان میں سیاسی اور سماجی منظرنامے پر ہونےوالی اہم سر گرمیاں 17/01/2022 08:00 ...
View More