ابھی آنے والا ہے Wed 6:00 PM  AEST
ابھی آنے والا ہے شروع ہوگا 
Live
Urdu radio

آسٹریلیا کے دور افتادہ جزیروں کی بقا کی جنگ عالمی ادارے تک کیسے پہنچی؟

The wall trying to hold back the sea on Saibai Source: SBS

ٹوریس اسٹریٹ آئی لینڈ کے مقامی افراد ماحولیاتی تبدیلی کے اثرات سے اپنے ملک کو بچانے کے لئے لڑ رہے ہیں۔مگر اس جنگ کا تعلق انسانی حقوق اور آسٹریلیا کی وفاقی حکومت کے خلاف کسی کیس سے کیسے بنتا ہے؟ نائڈوک ویک دو ہزار اکیس کا موضوع ہے ہیِل کنٹری یا زمین کے زخم بھرئیے ، آسٹریلیا کے شمالی سمندروں میں واقع ٹورس آئی لینڈ کے باشندے ماحولیاتی تغیرسے بقا کی جنگ اقوامِ متحدہ میں لے گئے ہیں اور ان کی فریق ہے آسٹریلیا کی وفاقی حکومت۔

ٹورس اسٹریٹ آئی لینڈرز آسٹریلیا کے شمالی سمندر اور پی این جی کے درمیانی جزیروں پر مقیم اقلیتی آبادی ہے۔ تقریبا سات ہزار ٹورس اسٹریٹ آئی لینڈرز ان جزیروں پر آباد ہیں جو نسلی طور پر میلانسی کہلاتے ہیں اور جو زبان کے لحاظ  سے ایب اوریجنلز سے الگ اقلیت ہیں ۔اقوامِ متحدہ کی انسانی حقوق کی تنظیم کے ہیومن رائٹس ایکٹ میں اس بات کو تسلیم کیا گیا ہے کہ آسٹریلین عوام کی حیثیت سے ٹورس اسٹریٹ آئی لینڈرز کو ثقافتی تحفظ دینا آسٹریلیا کی ذمہ داری ہے۔

کوئینز لینڈ کی زمینی شمالی حدود کے آخری سرے سے آگے سمندر کے بیچ  ٹوریس آئی لینڈ کے کچھ اور چھوٹے نشیبی جزیرے بھی آب و ہوا کی تبدیلی کے باعث بقا کی جنگ لڑ رہے ہیں۔  کلائیمنٹ کونسل کے مطابق ، ٹوریس آئی لینڈز میں سمندر کی سطح بڑھنے کی شرح عالمی اوسط کی  شرح  کے مقابلے میں دوگنی رفتار سے بڑھ رہی ہے۔ نشیب میں واقع ہونے کے باعث سمندری موجوں اور طوفان کا نشانہ بننے والے یہ آباد جزیرے پہلے ہی خطرے میں ہیں۔ 

It's land at risk of vanishing - and so too a culture that has survived for millennia
The Torres Strait, off the northern tip of Queensland, is home to a of chain of low-lying islands
SBS

 ٹورس اسٹریٹ کے ان جزیروں کو ماحولیاتی تبدیلی سے سخت خطرات لاحق ہیں اور مقامی آبادی نےآسٹریلیا کی حکومت کو فریق بناتے ہوئے اقوامِ متحدہ میں دعویٰ دائیر کیا ہے کہ آسٹریلیا تیزی سے بڑھتی سطح سمندر اور اس کے نتیجے میں جزیروں کے ڈوبنے کے سنگین خطرات سے نمٹنے میں ناکام رہا ہے۔  ان جزیروں کی آبادی کو خوف ہے کہ ان کی ثقافت کی بقا خطرے میں ہے کیونکہ جزیرے پر رہائیش کے قابل زمین تیزی سے کم ہو رہی ہے۔

  مقامی رہائیشی مسٹر موسبی کا کہنا ہے کہ جزیرے پر واقع انکے گھر  کا کچھ نہ کچھ حصہ ہر دن کم ہو رہا ہے

  رہائشی مسٹر ورثم کہتے ہیں کہ سمندر کا کھارا  پانی پینے کے پانی کی رہ گزر  میں داخل ہورہا ہے کولکالگل کا قبیلہ ٹورنس آئی لینڈز کے ایک چھوٹے جزیرے ماسیگ سے تعلق رکھتا ہے ۔ ریت کے ایک بڑے ٹیلے پر کھڑے مسٹر موسبی  کہنا تھا کہ کبھی ان کے گاؤں میں ریت کی آواز میں زندگی دھڑکتی تھی، مگر اب سمندر ریت کو نگل رہا ہے اور ان کے پیروں کے نیچے سے زمین سرک رہی ہے  جس کے باعث قبیلے کی معاشرت اور ثقافت بھی خطرے میں ہے۔

  مسیگ کے جزیرے کے باسی بھی اسی مسئلے سے دوچار ہیں ، جہاں مسٹر موسبی کا کہنا ہے کہ اب مقامی سبزیوں اور مچھلیوں جیسی غذا کو بھی خطرہ لاحق ہے۔ان کے مطابق پانی کی بڑھتی سطح کے باعث سڑکیں ، مقدس، ثقافتی مقامات اور ان کے پیاروں کی باقایت بھی بہہ رہی ہیں۔

Islanders are arguing Australia's inaction on climate change is a violation of their rights to culture.
Yessie is among eight Torres Strait Islanders pursuing a global-first legal case against the Australian Government
SBS

  موسمیاتی کونسل کی وارننگ کے مطابق پاپوا نیو گینی کے ساحل سے چار کلومیٹر دور پانچ سو افراد پر مشتمل خاندانوں کا قبیلہ "سائبائی" ڈوبنے کے خطرے سے دوچار ہے اور خدشہ ہے کہ یہ جزیرہ غیر آباد ہو سکتا ہے۔

یسی موسبی کے لئے  زمین کو کھونا ہر چیز سے محروم ہونا ہے۔ یسی آسٹریلین حکومت کے خلاف عالمی سطح پر پہلے قانونی مقدمے کی پیروی کرنے والے  آٹھ ٹوریس جزیروں کے لیڈرز میں شامل ہیں  جن کا دعویٰ ہے کہ آسٹریلین حکومت کی غیر موثر پالیسیاں  ماحولیاتی تبدیلی سے بچاؤ میں ناکامی کا اصل سبب ہیں جس کے باعث ان کی ثقافت اور معاشرت کو خطرہ ہے۔اقوام متحدہ کے چارٹر  مطابق ٹورس آئی لینڈرز کی ثقافت کی حفاظت کی ذمہ داری آسٹریلین حکومت پر عائید ہوتی ہے۔اور وفاقی حکومت کے ناکافی اقدامات  ٹورس آئی لینڈرز کے ثقافتی حقوق کی خلاف ورزی ہے۔ 

According to the Climate Council, sea levels in the Torres Strait are rising at twice the rate of the global average.
Famlies on Saibai island fear the survival of their culture is at stake and islands are on a path to becoming inhabitable
SBS

 

نیڈ ڈیوڈ ، ٹورس آئی لنڈر لینڈ کونسل کے چیئر پرسن ہیں ، ان کا قبیلہ ٹوراس آئی لینڈز کے اس خطے کا  قدیم آبائی مالک تسلیم کئا جاتا ہے۔ انہوں نے اقوام متحدہ میں  دعویٰ دائیر کرنے میں کلیدی کردار ادا کیا ہے۔وہ کہتے ہیں کہ یہ کوشش  ہماری کہانی کا اگلا باب ہے جس کا مقصد اپنی روایتی ثقافت کوماحولیاتی تبدیلی سے  بچانے کی کوشش کرنا ہے۔ مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ کام میں دیر ہونے کے باعث سمندری پانی کا زمینوں میں جذب ہونے اور ماحولیاتی تباہی کی رفتار میں تیزی آ گئی ہے جس کی ذمہداری آسٹریلین حکومت پر عاٗید ہوتی ہے۔  

آسٹریلیا کی ماحولیاتی امور کی وکیل سوفی مرجاناک  آٹھ جزیروں کےدعویداروں کی نمائندگی کررہی ہیں۔   وہ کہتی ہیں کہ اس سال کے آخر تک اس معاملے سے متعلق فیصلہ سنادیا جائے گا۔

Saibai, four kilometres off the coast of Papua New Guinea and home to 500 people is "especially at risk", the climate council is warning
Herbert Warusam fears the island could become uninhabitable
SBS

 موریسن حکومت کے ترجمان نے ایس بی ایس کو بتایا ہے کہ انہیں یقین ہے کہ آسٹریلیا کی آب و ہوا میں تبدیلی کی پالیسیاں انسانی حقوق کی بین الاقوامی ذمہ داریوں کے مطابق ہیں۔ انہوں نے ٹوریس آی لینڈ میں "بنیادی ڈھانچے کی تعمیر میں مدد فراہم کرنے کا وفاقی حکومت کا عزم دہرایا ۔

  آسٹریلین حکومت کے مطابق  آئی لینڈز میں بنیادی ڈھانچے یا انفرا اسٹرکچر فنڈزنگ کے پچیس ملین ڈالر کے پروگرام کے تحت سمندری پانی کی نکاسی کی نالیوں   تیاری کا کام جاری رکھا ہے مگر جزیرے کے مقامی کام کی سست رفتاری کی شکائیت کر رہے ہیں۔

آٹھ جزیروں پر مشتمل  ٹوراس آئی لینڈرز آسٹریلن حکومت سے گرین ہاؤس گیسوں کے اخراج کو کم کرنے کے لئے سخت عملی اقدامات کا مطالبہ کر رہے ہیں۔

وہ امید کر رہے ہیں کہ اقوام متحدہ آسٹریلین حکومت پر دباؤ ڈالیں گے کہ وہ ان جزیروں مقیم آبادیوں کو بچانے میں مدد کریں۔


 

 آڈیو پوڈ کاسٹ سننے کے لئے اوپر دئے آڈیو آئیکون پر کلک کیجئے 

  یا پھرنیچے دئے اپنے پسندیدہ پوڈ کاسٹ پلیٹ فارم سے سنئے

[Spotify Podcast, Apple Podcasts,  Google Podcast , Stitcher Podcast

کو سرچ کرکے انسٹال کیجئے SBS Radio ہماری موبائیل ایپ

 

Coming up next

# TITLE RELEASED TIME MORE
آسٹریلیا کے دور افتادہ جزیروں کی بقا کی جنگ عالمی ادارے تک کیسے پہنچی؟ 07/07/2021 10:10 ...
SBS Urdu News 23 May 2022 23/05/2022 04:00 ...
Labor party ready to form the next Australian parliament after winning the 2022 election-Urdu News 22 May 2022 22/05/2022 10:30 ...
SBS Urdu News 20 May 2022 20/05/2022 04:00 ...
کیا تارکینِ وطن ووٹرز امیدوار کے بارے میں معلومات کر کے ووٹ ڈالتے ہیں؟ 19/05/2022 00:10 ...
ایس بی ایس اردو خبریں 19 مئی 2022 19/05/2022 04:23 ...
'فوٹی' کیا ہے؟ آسٹریلین کھیل کے بارے میں وہ سب کچھ جو آپ جاننا چاہتے ہیں 18/05/2022 22:00 ...
Judges asking Australian politicians to push for a federal integrity commission-Urdu News 18 May 2022 18/05/2022 10:05 ...
امیگرنٹ خواتین عملی سیاست سے دور کیوں 17/05/2022 15:07 ...
ایس بی ایس اردو خبریں 17 مئی 2022 17/05/2022 05:13 ...
View More